Community News


اوورسیز پاکستانی ملک کی ترقی میں اہم کردار ادا کر رہےہیں:عبداللہ گل

عظیم جرنیل کے بیٹے کو کویت میں خوش آمدید کہتے ہیں: حافظ محمد شبیر

 

سابق آئی ایس آئی چیف کے بیٹے کے اعزاز میں عشائیہ: کمیونٹی کی ممتاز شخصیات کی شرکت پاکستان کے سابق آئی ایس آئی چیف حمید گل کے اعزاز میں پاکستان بزنس سنٹر کے ڈائریکٹرحافظ محمد شبیر نے جمعہ کی شب کراون پلازہ میں عشائیہ دیا جس میں کمیونٹی کی ممتاز شخصیات نے شرکت کی۔عبداللہ گل حافظ محمد شبیرکی دعوت پر گزشتہ روز کویت پہنچے تھے وہ آج پاکستان بزنس سنٹر کے زیراہتمام یوم دفاع کے سلسلہ میں منعقدہ ایک تقریب میں شرکت کریں گے۔

 

 تقریب سے خطاب کرتے یوئے حافظ محمد شبیر نے کہا کہ وہ ایک عظیم جرنل کے بیٹےکو کویت کی سرزمین پر خوش آمدید کہتے ہیں انہوں نے کہا کہ جنرل حمیدگل ایسے جرنل تھے جن سے زمانہ ڈرتا تھا دشمن ان سے خوفزدہ رہتا تھا۔ انہوں نے عبداللہ حمید گل سے مخاطب ہوئے کہا کہ آپ یوم دفاع کے حوالہ سے ایک منفرد تقریب میں شرکت کر رہےہیں پہلی مرتبہ کویت میں ایسی تقریب منعقد ہو رہی ہے جس میں جنگ65 کے شہداء اور غازیوں کے حوالہ سے ایک فوتو گیلری تیار کی گئی ہے یہ ایک سرپرائز ہو گا کہ جنگ65 کے غازی بھی تقریب سے خطاب کریں گے جن میں سے ایک غازی کا پورا بازو جنگ کی نذر ہو گیا تھا۔ شہداء اور غازیوں کے لواحقین شرکت کریں گے۔ان کے علاوہ برادر ملک کویت میں خدمات انجام دینے والے حاضر سروس فوجی بھی پہلی مرتبہ کسی تقریب میں شرکت کریں گے قبل ازیں عبداللہ گل نے اپنے مختصر خطاب میں کہا کہ وہ حافظ محمد شبیر کے تہہ دل سے گذار ہیں جنہوں نے انہیں کویت آنے اور پاکستانی کمیونٹی سے ملاقات کا موقعہ فراہم کیا۔انہوں نے کہا کہ اوورسیز پاکستانی ملکی ترقی میں انتہائی اہم کردار ادا کر رہے ہیں ملکی معیشت کو استحکام دینے میں اوورسیز پاکستانی ریڑھ کی ہڈی کا کردار ادا کر رہے۔

 

انہوں نے موقعہ پر موجود میڈیا ارکان کو بھی خراج تحسین پیش کیا اور کہا کہ میڈیا معاشرے کا چوتھا ستون ہے۔انصاف ویلفیئر سوسائٹی کویت کے وائس چئیرمین ایگزیکٹیو بورڈ تبسم جاوید ملک نے بھی تقریب سے مختصر خطاب کیا آور کہا کہ وہ عبداللہ گل کو کویت میں خوش آمدید کہتے ہیں۔کمیونٹی کی جن سرکردہ شخصیات نے تقریب میں شرکت کی ان میں ڈاکٹر شجاع الدین صدر ایسوسی ایشن آف پاکستانی ڈاکٹرز ان کویت انیس الرحمان بٹ شمشاد احمد خان رہنماء انصاف ویلفیئر ایسوسی ایشن کویت اسكے علاوه راجا ظفر, افضل شافى, عاطف صديقى (پاكستانيز ان كويت), نعيم جان, احتشام الله دته, محمد عمر, طارق نزير, طارق اقبال و شهزاد اقبال (وپ) , طارق علی محسن, عابد ملك و خالد نور,عرفان كيانى, ايوب بهٹي, احسان بيگ (سماد) اور دیگر شامل تھے۔ کھانے کے بعد ملکی حالات پر گفتگو ہوئی عبداللہ گل نے ملکی حالات کا غیر جانبدارانہ اور دلچسپ تجزیہ کیا۔ انہوں نے میڈیا ارکان اور شرکاء کے سوالات کے تسلی بخش جوابات دیئے اور آخر میں پاکستان اور امت مسلمہ کی ترقی و سلامتی کیلئے دعا بھی کرائی۔ فوجی بینڈ کےساتھ کویت کی تاریخ میں پہلی مرتبہ 85 طلباء پرفارم کریں گے۔ حافظ محمد شبیر نے میڈیا کو بھی خراج تحسین پیش کرتے ہوئے کہا کہ لوکل میڈیا میرے لئے فیملی کی طرح ہے جو اس پروگرام کی کامیابی کیلئے صبح و شام ان کے ساتھ کام کرہا ہے۔

 
 
پاکستان میں آئی ایس آئی کے سابق سربراہ لیفٹیننٹ جنرل (ر) حمید گل کے صاحبزادے گذشتہ روز کویت پہنچنے تو ان کا شاندار استقبال کیا گیا،پاکستان بز نس سنٹر کویت کے ڈائریکٹر اور پاکستان ٹورازم ڈویلپمنٹ کارپوریشن کے کوآرڈینیٹر برائے کویت حافظ محمد شبیر اور
کویت میں مقیم پاکستانی کمیونٹی کی سرکردہ شخصیات نےکویت ائیرپورٹ پر ان کا والہانہ استقبال کیا،وہ حافظ محمد شبیر کی دعوت پر کویت آئے ہیں اور ہفتہ 8 ستمبر کو یوم دفاع پاکستان کے سلسلہ میں ایک تقریب میں اعزازی مہمان کے طور پر شریک ہونگے، استقبال کرنے والوں میں پی ٹی آئی کویت کے مقامی رہنما اور میڈیا ارکان شامل تھے،اس موقعہ پر عبداللہ گل نے مختصر گفتگو میں کہا کہ وہ حافظ محمد شبیر کے شکر گزار ہیں جنہوں نے انہیں کویت میں پاکستانی کمیونٹی سے ملاقات کا موقع فراہم کیا وہ یہاں آکر بہت اچھا محسوس کر رہے ہیں۔
 
 
 

There's only one thing that Pakistanis probably love more than their own family. You guessed it: bakras.

Now that Eid's here, we don't know what's more awkward, the people and their obsessive relationship with their bakras or the fact that these 'unhealthy' relationships lead to a happy qurbani.

So here are 13 pictures people sent our way showing their love (and obsession) with bakras on the days leading up to Eid ul Azha.

1) When this guy missed his pet dog and decided to take his sheep for a walk instead

Photo submitted by @mystapaki - Instagram
Photo submitted by @mystapaki - Instagram

 

Ba ba woof...?

2) When this kid mistook it for a childhood best friend

Photo submitted by @maryam_mirza3 - Instagram
Photo submitted by @maryam_mirza3 - Instagram

 

Together forever, never apart... till Bakra Eid. Maybe in distance but never in the stomach... Or maybe not.

3) When the cameraman thought it was more important to focus on the bakra than their own sibling

Photo submitted by @whenishoot - Instagram
Photo submitted by @whenishoot - Instagram

 

Bakra feeling #OhSoFabulous #CoverBakraMaterial #SayHaaay

4) When the cow refused to play dog with this teeny tiny girl

Photo submitted by @syedasad378 - Instagram
Photo submitted by @syedasad378 - Instagram

 

Bad bakra! Bad bakra!

5) When this bakra refused to play eye to eye with the little boy

Photo submitted by @inst_abbas - Instagram
Photo submitted by @inst_abbas - Instagram

 

"Your eyes are like sunshine, your precious heart belongs to me because I love kata-kat"

6) When the owners dressed their sheep as the Khal Drogo of the herd

Photo submitted by @mumalmustafa - Instagram
Photo submitted by @mumalmustafa - Instagram

 

Except with ankle bells... and the missing Khaleesi

7) When this man challenged his cow to a race and lost miserably

Photo submitted by @syedasad378 - Instagram
Photo submitted by @syedasad378 - Instagram

 

Can you look this fabulous on Eid AND run like a race horse? I think not.

8) When the owners got a goat instead of a cheerleader and decided to decorate it with pompoms

Photo submitted by @whenishoot - Instagram
Photo submitted by @whenishoot - Instagram

 

Give me an S! Give me a W! Give me an A! Give me a G! Put it together and what do you get? SWAG! Hell yeah!

9) When the owner was desperate for a female companion and dressed their goat in a flower headband

Photo submitted by @heliumvanilla_ - Instagram
Photo submitted by @heliumvanilla_ - Instagram

 

She loves me, she loves me not...

10) When the goat became this photographer's muse

Photo submitted by @umaimaumi - Instagram
Photo submitted by @umaimaumi - Instagram

 

Working that side pose like nobody's business. Tyra Banks would be proud.

11) When the owner forgot the difference between Snoop Dogg and a bakra

Photo submitted by @aneesabatool - Instagram
Photo submitted by @aneesabatool - Instagram

 

Yo. What's up, dawg? Umm, I mean bakra... #Awkward

12) When this man forced his goat to play with his pet monkey

Photo submitted by @ridabee - Instagram
Photo submitted by @ridabee - Instagram

 

Totally doesn't remind us of the time we were forced to play with our younger siblings. Pfft. Totally not.

13) When the little boys thought giving it a bath would wash away its sins before the sacrifice

Photo submitted by @shyza_ - Instagram
Photo submitted by @shyza_ - Instagram

PBAK hosts Independence Day of Pakistan in Kuwait: 9-AUG-2018 at INN & GO Hotel Sharq, Kuwait. 

Prominent members of Pakistani community alone with their families were invited, the Pakistani ambassador to Kuwait H.E Ghulam Dastagir attended as a chief guest.

 

Live Coverage of this event was covered by pakistanis in Kuwait known as PIK 

Link Part-1: https://www.facebook.com/PakistanisInKuwait/videos/1842484805849826/

Link Part-2: https://www.facebook.com/PakistanisInKuwait/videos/1842675595830747/

 

Full Album of the event can be seen at the

Link: 

 

 

المشارکہ فی جائیزہ الکویت الدولیہ لحفظ القران الکریم میں شرکت کیلئے (13سالہ بچہ (حافظ حذیفہ اورانکے والد محترم پاکستان سے کویت پہنچ گئے، کویت پہنچے پر حافظ محمدشبیر ڈائریکٹر پاکستان بزنس سنٹر کویت ، عابد ملک سمیت دیگرافراد نے ان کا شاندار استقبال کیا۔ یاد رہے یہ مشارکۃ وزارت اوقاف و شؤن الاسلامیہ الکویت کی زیرنگرانی منعقد ہورہاے ہے، ہم سب حافظ حذیفہ کی کامیابی کیلئے دًعاگو ہیں۔

 

 

گذشتہ دنوں ملٹی نیشنل سرمایہ کاری کمپنیوں کے نمائندے صلاح ابوالزید اورسالم الکندری کی سفارت خانہ پاکستان میں عزت مآب سفیر پاکستان غلام دستگیر سے ملاقات ۔ اس سرمایہ کاری میٹنگ کا اہتمام پاکستان بزنس سنٹر کویت کے ڈائریکٹر حافظ محمد شبیر نے کیا تھا۔ اس موقع پر پاکستان میں سرمایہ کاری کے فروغ کے حوالہ سے تبادلہ خیال کیاگیا۔ عزت مآب سفیر پاکستان غلام دستگیر کے سرمایہ کاری کے سوال کے جواب میں انہوں نے کہا کہ وہ مختلف کمپنیوں کے کنسلٹنٹ یعنی نمائندے ہیں اور انکی طرف سے سرمایہ کاری لامحدود ہو گی۔کویتی سرمایہ کاروں نے پاکستان میں سرمایا کاری کے متعلق کہا کہ اگر انہیں سرمایہ کاری کے پلان کے متعلق آگاہ کردیا جائے وہ انہی دنوں بھی پاکستان جانے کیلئے تیار ہیں۔کویتی سرمایا کاروں کا کہنا تھا کہ سرمایہ کاری کرنے والی کمپنیوں نے پاکستان کو سرمایہ کاری کے حوالہ سے ایک مناسب اور محفوظ ملک کے طور پر تسلیم کر لیا ہے۔انہوں نے کہا کہ جو بھی پراجیکٹ شروع کریں اسکی سیکورٹی کی ذمہ داری حکومت پاکستان کی ہوگی جس طرح انٹرنیشنل پراجیکٹس کی ذمہ داری حکومت پاکستان پہلے اٹھاتی ہے۔ کویتی سرمایہ کاروں نے یہ بھی کہا کہ سوورین گارنٹی کیلئے پاکستان کے وزیر خزانہ ہی ہمارے ساتھ اپنا معاہدہ کریں گے تاکہ کسی بھی صورت حال مثلا انتخابات ہڑتالوں وغیرہ کی صورت میں ان کا سرمایہ منافع محفوظ رہے۔ اگلا پوائنٹ ان کا یہ تھا کہ پاکستان کے بین الاقوامی سطح کے نہیں بلکہ ہمیں پاکستان میں عالمی سطح پر ریپوٹڈ بینک کی ضرورت ہے یا نیشنل بینک کویت یا کویت فنانس بینک کی وہاں برانچز ہو جن کے ذریعے ہم اپنے سرمائے منافع وغیرہ کا لین دین کرسکیں۔انٹرنل بینکنگ فسیلٹی کی بات کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ وہاں کے جو لوکل بینک ان سے لین دین کر سکتے ہیں قرضے وغیرہ لے سکتے ہیں۔ انہوں نے کہا ہر پروجیکٹ کی فیزیبلٹی حکومت پاکستان تیار کر کے دے ہم اس فیزیبلٹی کے مطابق سرمایہ کاری کی کوٹیشن دیں گے جس کی منظوری کے بعد ہمارا ایک وفد پاکستان کا دورہ کرے گا ون ٹو ون ملاقاتوں کے بعد کنٹریکٹ میمورنڈم آف انڈرسٹینڈنگ ایم او یو کی صورت میں دستخط کرے گا۔ ایم او یو دستخط کرنے کے بعد ہم فیزیبلٹی سٹڈی کے مطابق اپنا کام آگے بڑھائیں گے اور منصوبہ کے مطابق سرمایہ کاری کریں گے،اس سلسلہ میں ہمیں ہر قسم کی سہولت چاہیے اورہم اپنے طریقے سے کام کریں گے،حافظ محمد شبیر کے مطابق اس موقعہ پر انہوں نے سوال اٹھایا کہ اگر ہمارے پاس فیزیبلٹی اسٹڈی نہ ہو تو اس طرز پر کام شروع کر دیں جیسا کہ چین والوں کہ ہم نے جگہ دی اور بتایا کہ ہمیں بجلی گھر چاہئے۔سولر پلانٹ چاہیے،فائیو اسٹار ہوٹل وغیرہ چاہیے جیساکہ سی پیک سے متعلق وہ کر رہے ہیں تو وہ خود ہی فیزیبلٹی رپورٹ تیار کرتے ہیں جس پر انہوں نے کہاکہ ان کے پاس ایسی ٹیمیں موجود ہیں جو بین الااقوامی معیار کے پروجیکٹس کر چکی ہیں و ہ فیزیبلٹی تیار کر سکتی ہیں۔ ان کو مٹیریل لے جانے کیلئے بھی فیسلٹی چاہیے ون ونڈو آپریشن چاہیے بعد میں انویسٹمنٹ ٹرانسفر کرنے کیلئے بھی فیسلٹی چاہیے بینکنگ فیسلٹی چاہیے گورنمنٹ ٹو پرائیویٹ سیکٹر میں بھی اگر کوئی پروجیکٹ کرنا چاہیں تو گورنمنٹ ہی ان کو سووران وارنٹی دے گی کہ ان کا کوئی معاملہ نقصان کی طرف نہ جائے۔ ہمیں ٹرانسپورٹ رہنے سہنے کیلئے ایسا ماحول دیا جائے تاکہ ان کے لوگ آسانی سے رہ سکیں ان کے لئے کوئی مسئلہ نہ ہو۔ وہ بارٹر ڈیل کیلئے بھی تیار ہیں یہ دنیا میں ایک نظام چلتا ہے جس کے مطابق وہ کوئی سڑک کارخانہ وغیرہ بناتے ہیں دس پندرہ سال کی طے شدہ مدت تک ٹال ٹیکس وغیرہ وصول کرتے ہیں جس کے بعد وہ ہینڈ اوور کر دیتے ہیں۔ سیکورٹی،لاء اینڈ آرڈر میں کوئی مشکل نہیں ہونی چاہئے،یہ سب حکومت کی ذمہ داری ہوگی،ہمیں اپنا منافع اپنے ملک لانے یا بینکوں میں ٹرا نسفر کرنے میں کوئی مشکل نہیں ہونی چاہیئے،یہ سب ایگریمنٹ میں لکھا ہو گا۔ عزت مآب سفیر پاکستان نے سرمایہ کاری کی حد کے بارے میں استفسار کیا تو انہوں نے کہا کہ انہیں روڈ میپ دیں،ان کے پاس اربوں ڈالر کے اثاثے ہیں۔ ان کے لیگل پینل نے بھی فیصلہ کیا ہے کہ پاکستان سرمایہ کاری کے لحاظ سے دنیا کا محفوظ ترین ملک ہے،ہمیں بتائیں کہاں سرمایہ کاری کرنی ہے،ڈیم بنانا،فائیواسٹار ہوٹل بنانا ہے،ائیرپورٹ تعمیر کرنا،سی پیک میں سرمایہ کاری کرنے کیلئے تیار ہیں،عزت مآب سفیر پاکستان نے کہا کہ وہ پاکستان میں سرمایہ کاری بورڈ کو سفارشات بھیجیں گے،حافظ محمد شبیرڈائریکٹر پاکستان بزنس سنٹر کویت و کوآرڈینیٹر پاکستان ٹوورازم برائے کویت نے کہا کہ وہ سرمایہ کاروں کا پینل عزت مآب سفیر پاکستان کے پاس لے کر گئے تھے جس کا انہوں نے پرتپاک خیر مقدم کیا،اور ان کی باتیں بڑے غور سے سنیں اور ہر ممکن تعاون کی یقین دھانی کرائی،اگلے ہفتہ وہ ایک اور وفد ٹورازم کے حوالہ سے بھی لے کر سفیر پاکستان غلام دستگیر کے پاس جائیں اور ہم اس طرح پاکستان لے لئے وہ جو کچھ کر سکتے ہیں کریں گے۔ انہوں نے کہا کہ ہمیں پاکستان میں سرمایہ کاری کیلئے سازگار فضا پیدا کرنا،ایسا محفوظ ماحول پیدا کرنا ہوگا کہ سرمایہ کار جوق در جوق پاکستان کا رخ کریں،پروجیکٹس کی فیزیبلٹی خود تیار کریں،اس بات کا انتظار نہ کریں کہ سرمایہ کار ادارے خود یہ کام کریں گے،انہوں نے کہا کہ کویت میں پاکستان کے سابق سفیر اسلم خان کے زمانے میں بھی ہم نے کویت کے مقامی ہوٹل کراؤن پلازہ میں سرمایہ کاروں کا ایک پینل کی میٹنگ کروائی تھی جو 15،ارب ڈالر کی سرمایہ کاری کیلئے تیارتھے لیکن مناسب موقع پر فیزیبلٹی رپورٹ نہ ہونے کے باعث وہ موقع ہم گنوا بیٹھے، حافظ محمدشبیر نے مزید کہا کہ ان کی خواہش ہے کہ اس موقعہ کو کسی بھی صورت ضائع نہ کیا جائے۔

7.png

login with social account

Images of Kids

Events Gallery

PIK Directory

 

Online Health Insurance System

 Sate of Kuwait

Go to top